Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

کسی صورت بھی نیند آتی نہیں میں کیسے سو جاؤں

انور مرزاپوری

کسی صورت بھی نیند آتی نہیں میں کیسے سو جاؤں

انور مرزاپوری

MORE BYانور مرزاپوری

    کسی صورت بھی نیند آتی نہیں میں کیسے سو جاؤں

    کوئی شے دل کو بہلاتی نہیں میں کیسے سو جاؤں

    اکیلا پا کے مجھ کو یاد ان کی آ تو جاتی ہے

    مگر پھر لوٹ کر جاتی نہیں میں کیسے سو جاؤں

    جو خوابوں میں مرے آ کر تسلی مجھ کو دیتی تھی

    وہ صورت اب نظر آتی نہیں میں کیسے سو جاؤں

    تمہیں تو ہو شب غم میں جو میرا ساتھ دیتے ہو

    ستارو تم کو نیند آتی نہیں میں کیسے سو جاؤں

    جسے اپنا سمجھنا تھا وہ آنکھ اب اپنی دشمن ہے

    کہ یہ رونے سے باز آتی نہیں میں کیسے سو جاؤں

    تری تصویر جو ٹوٹے ہوئے دل کا سہارا تھی

    نظر وہ صاف اب آتی نہیں میں کیسے سو جاؤں

    گھٹا جو دل سے اٹھتی ہے مژہ تک آ تو جاتی ہے

    مگر آنکھ اس کو برساتی نہیں میں کیسے سو جاؤں

    ستارے یہ خبر لائے کہ اب وہ بھی پریشاں ہیں

    سنا ہے ان کو نیند آتی نہیں میں کیسے سو جاؤں

    موضوعات

    یہ متن درج ذیل زمرے میں بھی شامل ہے

    ગુજરાતી ભાષા-સાહિત્યનો મંચ : રેખ્તા ગુજરાતી

    ગુજરાતી ભાષા-સાહિત્યનો મંચ : રેખ્તા ગુજરાતી

    મધ્યકાલથી લઈ સાંપ્રત સમય સુધીની ચૂંટેલી કવિતાનો ખજાનો હવે છે માત્ર એક ક્લિક પર. સાથે સાથે સાહિત્યિક વીડિયો અને શબ્દકોશની સગવડ પણ છે. સંતસાહિત્ય, ડાયસ્પોરા સાહિત્ય, પ્રતિબદ્ધ સાહિત્ય અને ગુજરાતના અનેક ઐતિહાસિક પુસ્તકાલયોના દુર્લભ પુસ્તકો પણ તમે રેખ્તા ગુજરાતી પર વાંચી શકશો

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے