aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

دائیں بازو میں گڑا تیر نہیں کھینچ سکا

عمیر نجمی

دائیں بازو میں گڑا تیر نہیں کھینچ سکا

عمیر نجمی

MORE BYعمیر نجمی

    دائیں بازو میں گڑا تیر نہیں کھینچ سکا

    اس لئے خول سے شمشیر نہیں کھینچ سکا

    شور اتنا تھا کہ آواز بھی ڈبے میں رہی

    بھیڑ اتنی تھی کہ زنجیر نہیں کھینچ سکا

    ہر نظر سے نظر انداز شدہ منظر ہوں

    وہ مداری ہوں جو رہ گیر نہیں کھینچ سکا

    میں نے محنت سے ہتھیلی پہ لکیریں کھینچیں

    وہ جنہیں کاتب تقدیر نہیں کھینچ سکا

    میں نے تصویر کشی کر کے جواں کی اولاد

    ان کے بچپن کی تصاویر نہیں کھینچ سکا

    مجھ پہ اک ہجر مسلط ہے ہمیشہ کے لئے

    ایسا جن ہے کہ کوئی پیر نہیں کھینچ سکا

    تم پہ کیا خاک اثر ہوگا مرے شعروں کا

    تم کو تو میر تقی میرؔ نہیں کھینچ سکا

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    عمیر نجمی

    عمیر نجمی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے