aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

فتنے عجب طرح کے سمن زار سے اٹھے

اکبر حیدرآبادی

فتنے عجب طرح کے سمن زار سے اٹھے

اکبر حیدرآبادی

MORE BYاکبر حیدرآبادی

    فتنے عجب طرح کے سمن زار سے اٹھے

    سارے پرند شاخ ثمر دار سے اٹھے

    دیوار نے قبول کیا سیل نور کو

    سائے تمام تر پس دیوار سے اٹھے

    جن کی نمو میں تھی نہ معاون ہوا کوئی

    ایسے بھی گل زمین خس و خار سے اٹھے

    تسلیم کی سرشت بس ایجاب اور قبول

    سارے سوال جرأت انکار سے اٹھے

    شہر تعلقات میں اڑتی ہے جن سے خاک

    فتنے وہ سب رعونت پندار سے اٹھے

    آنکھوں کو دیکھنے کا سلیقہ جب آ گیا

    کتنے نقاب چہرۂ اسرار سے اٹھے

    تصویر گرد بن گیا اکبرؔ چمن تمام

    کیسے غبار وادیٔ کہسار سے اٹھے

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق,

    نعمان شوق

    فتنے عجب طرح کے سمن زار سے اٹھے نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے