aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

ہے آرمیدگی میں نکوہش بجا مجھے

مرزا غالب

ہے آرمیدگی میں نکوہش بجا مجھے

مرزا غالب

MORE BYمرزا غالب

    ہے آرمیدگی میں نکوہش بجا مجھے

    صبح وطن ہے خندۂ دنداں نما مجھے

    ڈھونڈے ہے اس مغنی آتش نفس کو جی

    جس کی صدا ہو جلوۂ برق فنا مجھے

    مستانہ طے کروں ہوں رہ وادی خیال

    تا باز گشت سے نہ رہے مدعا مجھے

    کرتا ہے بسکہ باغ میں تو بے حجابیاں

    آنے لگی ہے نکہت گل سے حیا مجھے

    کھلتا کسی پہ کیوں مرے دل کا معاملہ

    شعروں کے انتخاب نے رسوا کیا مجھے

    واں رنگ ‌ہا بہ پردۂ تدبیر ہیں ہنوز

    یاں شعلۂ چراغ ہے برگ حنا مجھے

    پرواز‌ ہا نیاز تماشائے حسن دوست

    بال کشادہ ہے نگۂ آشنا مجھے

    از خود گزشتگی میں خموشی پہ حرف ہے

    موج غبار سرمہ ہوئی ہے صدا مجھے

    تا چند پست فطرتیٔ طبع آرزو

    یا رب ملے بلندیٔ دست دعا مجھے

    میں نے جنوں سے کی جو اسدؔ التماس رنگ

    خون جگر میں ایک ہی غوطہ دیا مجھے

    ہے پیچ تاب رشتۂ شمع سحر گہی

    خجلت گدازیٔ نفس نارسا مجھے

    یاں آب و دانہ موسم گل میں حرام ہے

    زنار واگسستہ ہے موج صبا مجھے

    یکبار امتحان ہوس بھی ضرور ہے

    اے جوش عشق بادۂ مرد آزما مجھے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    ذوالفقار علی بخاری

    ذوالفقار علی بخاری

    مأخذ:

    دیوان غالب جدید (Pg. 313)

    • مصنف: مرزا غالب
      • ناشر: مدھیہ پردیش اردو اکیڈمی، بھوپال
      • سن اشاعت: 1982

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے