aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

ہر آن جلوہ نئی آن سے ہے آنے کا

عبدالرحمان احسان دہلوی

ہر آن جلوہ نئی آن سے ہے آنے کا

عبدالرحمان احسان دہلوی

MORE BYعبدالرحمان احسان دہلوی

    ہر آن جلوہ نئی آن سے ہے آنے کا

    چلن یہ چلتے ہو عاشق کی جان جانے کا

    قسم قدم کی ترے جب تلک ہے دم میں دم

    میں پاؤں پر سے ترے سر نہیں اٹھانے کا

    ہماری جان پہ گرتی ہے برق غم ظالم

    تجھے تو سہل سا ہے شغل مسکرانے کا

    قسم خدا کی میں کچھ کھا کے سو رہوں گا صنم

    جو ساتھ اپنے نہیں مجھ کو تو سلانے کا

    نصیب اس کے شراب بہشت ہووے مدام

    ہوا ہے جو کوئی موجد شراب خانے کا

    بہت سے خون خرابے مچیں گے خانہ خراب

    یہی ہے رنگ اگر تیرے پان کھانے کا

    ہماری چھاتی پہ پھرتا ہے سانپ یاں احساںؔ

    وہاں ہے شغل اسے زلف کے بنانے کا

    مأخذ:

    Kulliyat-e-Ehsan (Pg. ebook-83 page-21)

    • مصنف: رفیعہ سلطانہ
      • اشاعت: 1968
      • ناشر: رفیعہ سلطانہ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے