aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

چاہت میں کیا دنیا داری عشق میں کیسی مجبوری

محسنؔ بھوپالی

چاہت میں کیا دنیا داری عشق میں کیسی مجبوری

محسنؔ بھوپالی

MORE BYمحسنؔ بھوپالی

    چاہت میں کیا دنیا داری عشق میں کیسی مجبوری

    لوگوں کا کیا سمجھانے دو ان کی اپنی مجبوری

    میں نے دل کی بات رکھی اور تو نے دنیا والوں کی

    میری عرض بھی مجبوری تھی ان کا حکم بھی مجبوری

    روک سکو تو پہلی بارش کی بوندوں کو تم روکو

    کچی مٹی تو مہکے گی ہے مٹی کی مجبوری

    ذات کدے میں پہروں باتیں اور ملیں تو مہر بلب

    جبر وقت نے بخشی ہم کو اب کے کیسی مجبوری

    جب تک ہنستا گاتا موسم اپنا ہے سب اپنے ہیں

    وقت پڑے تو یاد آ جاتی ہے مصنوعی مجبوری

    اک آوارہ بادل سے کیوں میں نے سایہ مانگا تھا

    میری بھی یہ نادانی تھی اس کی بھی تھی مجبوری

    مدت گزری اک وعدے پر آج بھی قائم ہیں محسنؔ

    ہم نے ساری عمر نباہی اپنی پہلی مجبوری

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    گل بہار بانو

    گل بہار بانو

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق,

    نعمان شوق

    چاہت میں کیا دنیا داری عشق میں کیسی مجبوری نعمان شوق

    موضوعات

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے