aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

کہیں محبت کے آسماں پر وصال کا چاند ڈھل رہا ہے

غلام حسین ساجد

کہیں محبت کے آسماں پر وصال کا چاند ڈھل رہا ہے

غلام حسین ساجد

MORE BYغلام حسین ساجد

    کہیں محبت کے آسماں پر وصال کا چاند ڈھل رہا ہے

    چراغ کے ساتھ طاقچے میں گلاب کا پھول جل رہا ہے

    بہت دنوں سے زمین اپنے مدار پر بھی نہیں ہے لیکن

    ابھی وہی شام چھا رہی ہے ابھی وہی دن نکل رہا ہے

    مجھے یقیں تھا میں ان ستاروں کے سایے میں عمر بھر چلوں گا

    بہت ہی آہستگی سے لیکن یہ سارا منظر بدل رہا ہے

    کبھی محبت سے باز رہنے کا دھیان آئے تو سوچتا ہوں

    یہ زہر اتنے دنوں سے میرے وجود میں کیسے پل رہا ہے

    کہیں روانی میں بڑھ رہے ہیں کہیں ستارے رکے ہوئے ہیں

    خبر نہیں کائنات کا یہ نظام کس طرح چل رہا ہے

    ابھی گماں تک نہیں ہے ساجدؔ اسے میں پھر یاد بھی کروں گا

    مگر یہ کیوں آئنے سے ہٹ کر وہ عکس بھی ہاتھ مل رہا ہے

    مأخذ:

    meyaar (Pg. 382)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے