aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

کیسا ڈر اشکوں کی نقل مکانی پر

عمار یاسر مگسی

کیسا ڈر اشکوں کی نقل مکانی پر

عمار یاسر مگسی

MORE BYعمار یاسر مگسی

    کیسا ڈر اشکوں کی نقل مکانی پر

    ہجر کا پہرہ ہے آنکھوں کے پانی پر

    اس کو ہنستا دیکھ کے پھول تھے حیرت میں

    وہ ہنستی تھی پھولوں کی حیرانی پر

    چشمے کے پانی جیسا شفاف ہوں میں

    داغ کوئی دل میں ہے نہ پیشانی پر

    گرہ لگا کر چادر ڈالی مصرعے کی

    میں نے دوسرے مصرعے کی عریانی پر

    والعصر انا الانسانا کا ورد کیا

    وار دی شہروں کی رونق ویرانی پر

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے