اب کے تجدید وفا کا نہیں امکاں جاناں

احمد فراز

اب کے تجدید وفا کا نہیں امکاں جاناں

احمد فراز

MORE BYاحمد فراز

    اب کے تجدید وفا کا نہیں امکاں جاناں

    یاد کیا تجھ کو دلائیں ترا پیماں جاناں

    یوں ہی موسم کی ادا دیکھ کے یاد آیا ہے

    کس قدر جلد بدل جاتے ہیں انساں جاناں

    زندگی تیری عطا تھی سو ترے نام کی ہے

    ہم نے جیسے بھی بسر کی ترا احساں جاناں

    دل یہ کہتا ہے کہ شاید ہے فسردہ تو بھی

    دل کی کیا بات کریں دل تو ہے ناداں جاناں

    اول اول کی محبت کے نشے یاد تو کر

    بے پیے بھی ترا چہرہ تھا گلستاں جاناں

    آخر آخر تو یہ عالم ہے کہ اب ہوش نہیں

    رگ مینا سلگ اٹھی کہ رگ جاں جاناں

    مدتوں سے یہی عالم نہ توقع نہ امید

    دل پکارے ہی چلا جاتا ہے جاناں جاناں

    ہم بھی کیا سادہ تھے ہم نے بھی سمجھ رکھا تھا

    غم دوراں سے جدا ہے غم جاناں جاناں

    اب کے کچھ ایسی سجی محفل یاراں جاناں

    سر بہ زانو ہے کوئی سر بہ گریباں جاناں

    ہر کوئی اپنی ہی آواز سے کانپ اٹھتا ہے

    ہر کوئی اپنے ہی سائے سے ہراساں جاناں

    جس کو دیکھو وہی زنجیر بہ پا لگتا ہے

    شہر کا شہر ہوا داخل زنداں جاناں

    اب ترا ذکر بھی شاید ہی غزل میں آئے

    اور سے اور ہوئے درد کے عنواں جاناں

    ہم کہ روٹھی ہوئی رت کو بھی منا لیتے تھے

    ہم نے دیکھا ہی نہ تھا موسم ہجراں جاناں

    ہوش آیا تو سبھی خواب تھے ریزہ ریزہ

    جیسے اڑتے ہوئے اوراق پریشاں جاناں

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    احمد فراز

    احمد فراز

    احمد فراز

    احمد فراز

    عاقب صابر

    عاقب صابر

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق,

    نعمان شوق

    اب کے تجدید وفا کا نہیں امکاں جاناں نعمان شوق

    موضوعات

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے