aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

نظر نظر بیقرار سی ہے نفس نفس میں شرار سا ہے

ساغر صدیقی

نظر نظر بیقرار سی ہے نفس نفس میں شرار سا ہے

ساغر صدیقی

MORE BYساغر صدیقی

    نظر نظر بیقرار سی ہے نفس نفس میں شرار سا ہے

    میں جانتا ہوں کہ تم نہ آؤ گے پھر بھی کچھ انتظار سا ہے

    مرے عزیزو مرے رفیقو چلو کوئی داستان چھیڑو

    غم زمانہ کی بات چھوڑو یہ غم تو اب سازگار سا ہے

    وہی فسردہ سا رنگ محفل وہی ترا ایک عام جلوہ

    مری نگاہوں میں بار سا تھا مری نگاہوں میں بار سا ہے

    کبھی تو آؤ کبھی تو بیٹھو کبھی تو دیکھو کبھی تو پوچھو

    تمہاری بستی میں ہم فقیروں کا حال کیوں سوگوار سا ہے

    چلو کہ جشن بہار دیکھیں چلو کہ ظرف بہار جانچیں

    چمن چمن روشنی ہوئی ہے کلی کلی پہ نکھار سا ہے

    یہ زلف بردوش کون آیا یہ کس کی آہٹ سے گل کھلے ہیں

    مہک رہی ہے فضائے ہستی تمام عالم بہار سا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے