روح پیاسی کہاں سے آتی ہے

جون ایلیا

روح پیاسی کہاں سے آتی ہے

جون ایلیا

MORE BYجون ایلیا

    روح پیاسی کہاں سے آتی ہے

    یہ اداسی کہاں سے آتی ہے

    ہے وہ یک سر سپردگی تو بھلا

    بد حواسی کہاں سے آتی ہے

    وہ ہم آغوش ہے تو پھر دل میں

    نا شناسی کہاں سے آتی ہے

    ایک زندان بے دلی اور شام

    یہ صبا سی کہاں سے آتی ہے

    تو ہے پہلو میں پھر تری خوشبو

    ہو کے باسی کہاں سے آتی ہے

    دل ہے شب سوختہ سواے امید

    تو ندا سی کہاں سے آتی ہے

    میں ہوں تجھ میں اور آس ہوں تیری

    تو نراسی کہاں سے آتی ہے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    جون ایلیا

    جون ایلیا

    جون ایلیا

    جون ایلیا

    مأخذ :
    • کتاب : yani (Pg. 48)

    موضوعات

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے