aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

شام کے تن پر سجی جو سرمئی پوشاک ہے

اے آر ساحل علیگ

شام کے تن پر سجی جو سرمئی پوشاک ہے

اے آر ساحل علیگ

MORE BYاے آر ساحل علیگ

    شام کے تن پر سجی جو سرمئی پوشاک ہے

    ہم چراغوں کی فقط یہ روشنی پوشاک ہے

    چاند پیشانی کا ٹیکا چاندنی پوشاک ہے

    رات نے پہنی ہے جو وہ ساحری پوشاک ہے

    خاک کا یہ جسم ہے اور خاک ہی پوشاک ہے

    زندگی کی یہ نہیں یہ روح کی پوشاک ہے

    اس کو جنت میں قدم رکھنے پے ہے پابندیاں

    جس کسی بد ذہن کی بھی کافری پوشاک ہے

    ہر گلی نکڑ نگر اب بن چکا مقتل یہاں

    بے گناہوں کی لہو تر چیختی پوشاک ہے

    سب کی تقریروں میں ویسے ہے خدا سب کا ہی اک

    ہاں مگر ہر دل کی اپنی مذہبی پوشاک ہے

    اس غزل کے حرف ساحلؔ مسکرائے کس قدر

    مدتوں سے جس نے پہنی ماتمی پوشاک ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے