aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

دے اٹھی لو جو ترے ساتھ گزاری ہوئی شام

ابھیشیک شکلا

دے اٹھی لو جو ترے ساتھ گزاری ہوئی شام

ابھیشیک شکلا

MORE BYابھیشیک شکلا

    دے اٹھی لو جو ترے ساتھ گزاری ہوئی شام

    حجرۂ جاں کی ہر اک چیز پہ طاری ہوئی شام

    عمر بھر دھوپ لپیٹے رہے اپنے تن پر

    ہم سے پہنی نہ گئی اس کی اتاری ہوئی شام

    پہلے تو مجھ سے مری ذات کا مطلب پوچھا

    اور پھر اپنے ہی احساس سے عاری ہوئی شام

    اے جنوں پوچھ اسی لمحۂ موجود سے پوچھ

    لمس یہ کس کا اٹھایا ہے کہ بھاری ہوئی شام

    دو ہی کردار نمایاں ہیں کہانی میں مری

    بے کراں دشت ہوا میں تو شکاری ہوئی شام

    اس طرف دشت بدن میں کوئی سورج ڈوبا

    اس طرف سینۂ افلاک سے جاری ہوئی شام

    میں نسیں کاٹ کے سورج میں اتر ہی جاتا

    پر خیال آیا ترا ہجر کی ماری ہوئی شام

    کیا فقط ہم سے سوالات کیے جائیں گے

    کیا فقط ہم سے مخاطب ہے یہ ہاری ہوئی شام

    ہم نے ہر شے میں اترتے ہوئے دیکھا خود کو

    یاد آئی جو ترے قرب پہ واری ہوئی شام

    موضوعات

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے