سنا ہے کوچ تو ان کا پر اس کو کیا کہیے

واجد علی شاہ اختر

سنا ہے کوچ تو ان کا پر اس کو کیا کہیے

واجد علی شاہ اختر

MORE BYواجد علی شاہ اختر

    سنا ہے کوچ تو ان کا پر اس کو کیا کہیے

    زبان خلق کو نقارۂ خدا کہیے

    مسی لگا کے سیاہی سے کیوں ڈراتے ہو

    اندھیری راتوں کا ہم سے تو ماجرا کہیے

    ہزار راتیں بھی گزریں یہی کہانی ہو

    تمام کیجیے اس کو نہ کچھ سوا کہیے

    ہوا ہے عشق میں خاصان حق کا رنگ سفید

    یہ قتل عام نہیں شوخئ حنا کہیے

    تراب پائے حسینان لکھنؤ ہے یہ

    یہ خاکسار ہے اخترؔ کو نقش پا کہیے

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق,

    نعمان شوق

    سنا ہے کوچ تو ان کا پر اس کو کیا کہیے نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے