aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

ہزاروں دکھ پڑیں سہنا محبت مر نہیں سکتی

وصی شاہ

ہزاروں دکھ پڑیں سہنا محبت مر نہیں سکتی

وصی شاہ

MORE BYوصی شاہ

    ہزاروں دکھ پڑیں سہنا محبت مر نہیں سکتی

    ہے تم سے بس یہی کہنا محبت مر نہیں سکتی

    ترا ہر بار میرے خط کو پڑھنا اور رو دینا

    مرا ہر بار لکھ دینا محبت مر نہیں سکتی

    کیا تھا ہم نے کیمپس کی ندی پر اک حسیں وعدہ

    بھلے ہم کو پڑے مرنا محبت مر نہیں سکتی

    پرانے عہد کو جب زندہ کرنے کا خیال آئے

    مجھے بس اتنا لکھ دینا محبت مر نہیں سکتی

    وہ تیرا ہجر کی شب فون رکھنے سے ذرا پہلے

    بہت روتے ہوئے کہنا محبت مر نہیں سکتی

    گئے لمحات فرصت کے کہاں سے ڈھونڈ کر لاؤں

    وہ پہروں ہاتھ پر لکھنا محبت مر نہیں سکتی

    RECITATIONS

    وصی شاہ

    وصی شاہ,

    وصی شاہ

    Hazaron dukh pade sehna mohabbat mar nahin sakti وصی شاہ

    موضوعات

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے