بچہ مزدور

امین حزیں

بچہ مزدور

امین حزیں

MORE BYامین حزیں

    میں ہوں اک بچہ مزدور

    بچپن سے ہوں کوسوں دور

    صبح سے کام پہ جاتا ہوں

    شام کو واپس آتا ہوں

    میں بھی پڑھنا چاہتا ہوں

    آگے بڑھنا چاہتا ہوں

    کھیل کود کو وقت نہیں

    کیا جی میں بد بخت نہیں

    چاہتا ہوں غبارے لوں

    ہم سن یاروں سے کھیلوں

    لیکن کیا کر سکتا ہوں

    دن بھر کام پہ رہتا ہوں

    کس سے دل کی بات کہوں

    کب تک میں خود پہ روؤں

    حالت سے مجبور ہوں میں

    اور بچہ مزدور ہوں میں

    کاش کوئی مجھ کو سمجھے

    مجھ سے نہ بچپن چھینے

    مأخذ :
    • کتاب : kulliyat-e-Ameen-E-Hazeen (Pg. 39)
    • Author : Ameen Hazin
    • مطبع : Sani Publication 390,Nana Peth,Pune-2 (2005)
    • اشاعت : 2005

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے