شکایت

فاروق بخشی

شکایت

فاروق بخشی

MORE BYفاروق بخشی

    یہ تم نے کیا لکھا

    میں نے تمہیں دل سے بھلا ڈالا

    تمہیں تو یاد ہوگا

    بچھڑتے وقت تم نے ہی کہا تھا

    اگر تم چاہتے ہو یہ

    تمہارے اور میرے درمیاں

    یہ رشتہ عمر بھر یونہی رہے قائم

    تو ان لفظوں سے یونہی دوستی رکھنا

    کبھی فرصت ملے تو آؤ اور دیکھو

    میں اب بھی لفظ لکھتا ہوں

    میں ان لفظوں میں جیتا اور مرتا ہوں

    میں ان لفظوں میں اپنا غم

    کچھ اس صورت سموتا ہوں

    کہ میرا غم بھی سب کو

    اپنا غم معلوم ہوتا ہے

    تمہیں فرصت ملے تو آؤ اور دیکھو

    مری سانسوں میں بسنے والا اک پل بھی

    تمہارے ذکر سے خالی نہیں ہوتا

    مأخذ :
    • کتاب : Udas Lamhon Ke Mausam (Poetry) (Pg. 46)
    • Author : Farooq Bakhshi
    • مطبع : Modern Publishing House (2003)
    • اشاعت : 2003

    موضوعات

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے