aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

ننھے پٹیلو کی شیخیاں

نشاط کشتواڑی

ننھے پٹیلو کی شیخیاں

نشاط کشتواڑی

MORE BYنشاط کشتواڑی

    سناتا ہوں تمہیں اے بھائیو میں

    کہ اندر میرے کیا جوہر چھپے ہیں

    بہادر ہوں میں دنیا میں اکیلا

    مرا مد مقابل کون ہوگا

    پہلواں مجھ سے ہر اک ڈر گیا ہے

    مری طاقت کا سکہ چل رہا ہے

    اگر رستم بھی میرا نام سن لے

    تو مارے خوف کے باہر نہ نکلے

    اگر میں جنگ کے میداں میں جاؤں

    تو ساری مکھیوں کے سر اڑاؤں

    اگر آئے گی بلی سامنے تو

    دولتا مار کے چھوڑوں گا اس کو

    جو چڑیا ہاتھ آ جائے کہیں سے

    تو سر اس کا جدا کر دوں چھری سے

    زہے قسمت دیا مرغی نے انڈا

    تو میں نے اس کو توڑا لے کے ڈنڈا

    اگر مچھر کو مکا ایک ماروں

    تو فوراً خاک میں اس کو ملا دوں

    کہو تو مرغ کی گردن مروڑوں

    نہ ہرگز وہ کہے گا ککڑوں ککڑوں

    غرض مجھ میں ہے طاقت اتنی بھاری

    سمجھ میں جو نہ آئے گی تمہاری

    مأخذ:

    تصویر خیال (Pg. 303)

    • مصنف: نشاط کشتواڑی
      • ناشر: ہمارا دور پبلیکیشنز، دہلی
      • سن اشاعت: 1988

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے