aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

میں ٹیچر کیوں ہوں

گل گلشن

میں ٹیچر کیوں ہوں

گل گلشن

MORE BYگل گلشن

    کبھی کبھی یہ سوچتی ہوں

    آخر میں ٹیچر کیوں ہوں

    کچھ اور نہ کر سکی

    کیا اس لیے میں ٹیچر ہوں

    جواب یہی بس آتا ہے

    سب کچھ کر سکتی ہوں

    شاید اسی لیے میں ٹیچر ہوں

    ننھے منے بچوں میں

    میں اپنا بچپن دیکھتی ہوں

    کسی میں سر سیدؔ

    کسی میں کلامؔ دیکھتی ہوں

    کبھی کبھی یہ سوچتی ہوں

    کہ مجھے صرف کتابوں کے

    نصاب ہی پڑھانے ہیں

    یا کہ ان کے ذہن کی کوری تختی پر

    کچھ اور لکھنا ہے

    بچے تو کچی مٹی کے لوندے ہیں

    انہیں مجھے ہی سنوارنا سجانا ہے

    اور انسانیت کے سانچے میں ڈھال کر

    ایک بہتر انسان بنانا ہے

    اگر میں یہ سب کچھ کر سکی تو

    کامیاب ہے میرا مقصد

    میرا کام سے محبت

    خدا کی خاص رحمت

    کبھی کبھی سوچتی ہوں

    مجھے ہی تو بنانی ہے

    ان نونہالوں کی شخصیت

    جو آج کمزور پودے ہیں

    کل سایہ دار درخت ہوں گے

    یہی قوم و ملت کے بخت ہوں گے

    شاید اسی لیے میں ٹیچر ہوں

    مأخذ:

    اگر محسوس کرو (Pg. 95)

    • مصنف: گل گلشن
      • ناشر: نیوز ٹاؤن پبلیشرز، ممبئی
      • سن اشاعت: 2019

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے