aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

استاد ہمارے

محمد اسد اللہ

استاد ہمارے

محمد اسد اللہ

MORE BYمحمد اسد اللہ

    استاد یہ قوموں کے ہیں معمار ہمارے

    ان ہی سے ہیں افراد ضیا بار ہمارے

    جینے کا سلیقہ بھی ہمیں ان سے ملا ہے

    احساس عمل فکر بھی ان ہی کی عطا ہے

    ان ہی کی ہے تعلیم جو عرفان خدا ہے

    ان ہی سے معطر ہوئے افکار ہمارے

    استاد یہ قوموں کے ہیں معمار ہمارے

    تاریک ہوں راہیں تو یہی راہ سجھائیں

    اسرار دو عالم سے یہ پردوں کو اٹھائیں

    سوئی ہوئی قوموں میں یہ ہمت کو جگائیں

    رہبر بھی یہ ہمدم بھی یہ غم خوار ہمارے

    استاد یہ قوموں کے ہیں معمار ہمارے

    اک نور کا مینار لب ساحل دریا

    اک مشعل بیدار سر وادیٔ صحرا

    ہے ظلمت آفاق میں بس ایک ستارہ

    ہیں دست نگر ان کے ہی شہکار ہمارے

    استاد یہ قوموں کے ہیں معمار ہمارے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے