aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

استاد

MORE BYفیض لدھیانوی

    نیک بچے دل سے کرتے ہیں ادب استاد کا

    باپ کی الفت سے بہتر ہے غضب استاد کا

    عام لوگوں کی جہالت دور کرنے کے لیے

    حق تعالی نے بنایا ہے سبب استاد کا

    اس کی برکت سے جہاں میں پھیلتی ہیں نیکیاں

    کیوں نہ پھر استاد سے راضی ہو رب استاد کا

    کچھ نہ کچھ عمدہ سبق دیتی ہے اس کی زندگی

    خلق سے خالی نہیں ہے کوئی ڈھب استاد کا

    جس گھڑی نادان بچوں کو سکھاتا ہے وہ علم

    چوم لیتے ہیں فرشتے آ کے لب استاد کا

    بس اسے پڑھنے پڑھانے سے ہمیشہ کام ہے

    کتنا اچھا مشغلہ ہے روز و شب استاد کا

    خواہ ساری عمر اس کے پاؤں دھو دھو کر پئے

    آدمی سے حق ادا ہوتا ہے کب استاد کا

    امتحاں میں حل نہ ہو جس دم کوئی مشکل سوال

    خود پسندوں کو پتا چلتا ہے تب استاد کا

    شکر کے جذبات سے گردن جھکا لیتا ہوں میں

    یاد آتا ہے مجھے احسان جب استاد کا

    کل زمانے کی نگاہوں میں وہ عزت پائے گا

    مرتبہ پہچان جائے گا جو اب استاد کا

    اس کی عالمگیر حیثیت ہے شاہوں کی طرح

    کل عجم استاد کا ہے کل عرب استاد کا

    چل رہے ہیں آج دنیا میں ہزاروں محکمے

    سچ اگر پوچھو تو ہے یہ فیضؔ سب استاد کا

    مأخذ:

    بچوں کی بہار (Pg. 17)

    • مصنف: فیض لدھیانوی
      • ناشر: ریاض بک ڈپو، لاہور
      • سن اشاعت: 1941

    موضوعات

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے