ہر طرف انبساط ہے اے دل

مصطفی زیدی

ہر طرف انبساط ہے اے دل

مصطفی زیدی

MORE BYمصطفی زیدی

    ہر طرف انبساط ہے اے دل

    اور ترے گھر میں رات ہے اے دل

    عشق ان ظالموں کی دنیا میں

    کتنی مظلوم ذات ہے اے دل

    میری حالت کا پوچھنا ہی کیا

    سب ترا التفات ہے اے دل

    اور بیدار چل کہ یہ دنیا

    شاطروں کی بساط ہے اے دل

    صرف اس نے نہیں دیا مجھے سوز

    اس میں تیرا بھی ہات ہے اے دل

    مندمل ہو نہ جائے زخم دروں

    یہ مری کائنات ہے اے دل

    حسن کا ایک وار سہہ نہ سکا

    ڈوب مرنے کی بات ہے اے دل

    موضوعات

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے