aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

کبھی گمان کبھی اعتبار بن کے رہا

غالب ایاز

کبھی گمان کبھی اعتبار بن کے رہا

غالب ایاز

MORE BYغالب ایاز

    کبھی گمان کبھی اعتبار بن کے رہا

    دیار چشم میں وہ انتظار بن کے رہا

    ہزار خواب مری ملکیت میں شامل تھے

    میں تیرے عشق میں سرمایہ دار بن کے رہا

    تمام عمر اسے چاہنا نہ تھا ممکن

    کبھی کبھی تو وہ اس دل پہ بار بن کے رہا

    اسی کے نام کروں میں تمام عہد خیال

    درون جاں جو مرے سوگوار بن کے رہا

    اگرچہ شہر میں ممنوع تھی حمایت خواب

    مگر یہ دل سبب انتشار بن کے رہا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے