aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

تاریخ کے صفحات میں کوئی نہیں ہم سر مرا

کاوش بدری

تاریخ کے صفحات میں کوئی نہیں ہم سر مرا

کاوش بدری

MORE BYکاوش بدری

    تاریخ کے صفحات میں کوئی نہیں ہم سر مرا

    محو سفر ہے آج تک پھینکا ہوا پتھر مرا

    ہر سمت صحن ذات میں پھیلے ہوئے سائے مرے

    بیٹھا ہے تخت فکر پر سمٹا ہوا دل بر مرا

    کیا خوش نصیبی ہے مری میں ایک تنہا فوج ہوں

    جھوٹ اور سچ کی جنگ میں کام آ گیا لشکر مرا

    ماحول سب کا ایک ہے آنکھیں وہی نظریں وہی

    سب سے الگ راہیں مری سب سے جدا منظر مرا

    اک رنگ استغراق ہے اک نکہت آوارگی

    ٹھہرا ہوا گاگر میں ہے بہتا ہوا ساگر مرا

    دنیا کرے گی ایک دن اوراق گردانی مری

    یاد آئے گا احباب کو گنجینۂ گوہر مرا

    کاوشؔ انا کی قید کے دیوار و در گرنے کو ہیں

    اک عالم اصغر میں ہے اک عالم اکبر مرا

    مأخذ :
    • کتاب : saughat-pahli-kitab-magazines (Pg. 366)
    • Author : mahmood ayaaz
    • اشاعت : 1991

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے