اب اندھیروں میں جو ہم خوف زدہ بیٹھے ہیں

خوشبیر سنگھ شادؔ

اب اندھیروں میں جو ہم خوف زدہ بیٹھے ہیں

خوشبیر سنگھ شادؔ

MORE BYخوشبیر سنگھ شادؔ

    اب اندھیروں میں جو ہم خوف زدہ بیٹھے ہیں

    کیا کہیں خود ہی چراغوں کو بجھا بیٹھے ہیں

    بس یہی سوچ کے تسکین سی ہو جاتی ہے

    اور کچھ لوگ بھی دنیا سے خفا بیٹھے ہیں

    دیکھ لے جان وفا آج تری محفل میں

    ایک مجرم کی طرح اہل وفا بیٹھے ہیں

    ایک ہم ہیں کہ پرستش پہ عقیدہ ہی نہیں

    اور کچھ لوگ یہاں بن کے خدا بیٹھے ہیں

    شادؔ تو بزم کے آداب سمجھتا ہی نہیں

    اور بھی لوگ یہاں تیرے سوا بیٹھے ہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے