aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

کر چکا قید سے جس وقت کہ آزاد مجھے

مردان علی خاں رانا

کر چکا قید سے جس وقت کہ آزاد مجھے

مردان علی خاں رانا

MORE BYمردان علی خاں رانا

    کر چکا قید سے جس وقت کہ آزاد مجھے

    ہاتھ ملتا ہی رہا دیکھ کے صیاد مجھے

    عمر بھر یوں تو کبھی لی بھی نہ کروٹ پس مرگ

    حیف رہ رہ کے کیا کرتے ہیں اب یاد مجھے

    حکم درباں کو ہے زنہار نہ آنے پائے

    غیر کے سامنے کرتے ہیں مگر یاد مجھے

    باغباں گلشن عالم کا میں وہ بلبل ہوں

    طائر سدرہ کہا کرتا ہے استاد مجھے

    ہم صفیروں کو مرا حال کھلے گا پس مرگ

    دیکھنا دل میں کریں گے وہ بہت یاد مجھے

    صحن‌ گلشن میں مرے پھول کریں گے گلچیں

    روئے گا سونا قفس دیکھ کے صیاد مجھے

    راہ الفت میں ملاقات ہوئی کس کس سے

    دشت میں قیس ملا کوہ میں فرہاد مجھے

    غیب سے ہوتے ہیں القا مرے دل میں مضمون

    دیکھ فیضان سخن کا ہے خداداد مجھے

    سبز باغ آتا ہے دنیا کا نظر جب رعناؔ

    یاد آتی ہے بہت حسرت شداد مجھے

    مأخذ:

    kulliyat-e-nizam (Pg. 67)

    • مصنف: مردان علی خاں رانا
      • اشاعت: 1875
      • ناشر: منشی نول کشور، لکھنؤ
      • سن اشاعت: 1875

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے