aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

مری نظر میں خاک تیرے آئنے پہ گرد ہے

بشیر بدر

مری نظر میں خاک تیرے آئنے پہ گرد ہے

بشیر بدر

MORE BYبشیر بدر

    مری نظر میں خاک تیرے آئنے پہ گرد ہے

    یہ چاند کتنا زرد ہے یہ رات کتنی سرد ہے

    کبھی کبھی تو یوں لگا کہ ہم سبھی مشین ہیں

    تمام شہر میں نہ کوئی زن نہ کوئی مرد ہے

    خدا کی نظموں کی کتاب ساری کائنات ہے

    غزل کے شعر کی طرح ہر ایک فرد فرد ہے

    حیات آج بھی کنیز ہے حضور جبر میں

    جو زندگی کو جیت لے وہ زندگی کا مرد ہے

    اسے تبرک حیات کہہ کے پلکوں پر رکھوں

    اگر مجھے یقین ہو یہ راستے کی گرد ہے

    وہ جن کے ذکر سے رگوں میں دوڑتی تھیں بجلیاں

    انہیں کا ہاتھ ہم نے چھو کے دیکھا کتنا سرد ہے

    مأخذ:

    Funoon(Jadeed Ghazal Number: Volume-002) (Pg. 983)

      • اشاعت: 1969
      • ناشر: احمد ندیم قاسمی
      • سن اشاعت: 1969

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے