صبح کی آج جو رنگت ہے وہ پہلے تو نہ تھی (ردیف .. ن)

فیض احمد فیض

صبح کی آج جو رنگت ہے وہ پہلے تو نہ تھی (ردیف .. ن)

فیض احمد فیض

MORE BYفیض احمد فیض

    صبح کی آج جو رنگت ہے وہ پہلے تو نہ تھی

    کیا خبر آج خراماں سر گلزار ہے کون

    شام گلنار ہوئی جاتی ہے دیکھو تو سہی

    یہ جو نکلا ہے لیے مشعل رخسار ہے کون

    رات مہکی ہوئی آئی ہے کہیں سے پوچھو

    آج بکھرائے ہوئے زلف طرحدار ہے کون

    پھر در دل پہ کوئی دینے لگا ہے دستک

    جانیے پھر دل وحشی کا طلب گار ہے کون

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    زہرا نگاہ

    زہرا نگاہ

    مأخذ :
    • کتاب : Nuskha Hai Wafa (Kulliyat-e-Faiz) (Pg. 292)
    • مطبع : Educational Publishing House (2009)
    • اشاعت : 2009

    موضوعات

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY