یاس

MORE BYفیض احمد فیض

    بربط دل کے تار ٹوٹ گئے

    ہیں زمیں بوس راحتوں کے محل

    مٹ گئے قصہ ہائے فکر و عمل!

    بزم ہستی کے جام پھوٹ گئے

    چھن گیا کیف کوثر و تسنیم

    زحمت گریہ و بکا بے سود

    شکوۂ بخت نا رسا بے سود

    ہو چکا ختم رحمتوں کا نزول

    بند ہے مدتوں سے باب قبول

    بے نیاز دعا ہے رب کریم

    بجھ گئی شمع آرزوئے جمیل

    یاد باقی ہے بے کسی کی دلیل

    انتظار فضول رہنے دے

    راز الفت نباہنے والے

    بار غم سے کراہنے والے

    کاوش بے حصول رہنے دے

    مأخذ :
    • کتاب : Nuskha Hai Wafa (Kulliyat-e-Faiz) (Pg. 47)
    • مطبع : Educational Publishing House (2009)
    • اشاعت : 2009

    موضوعات

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے