aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر
Fazl Tabish's Photo'

فضل تابش

1933 - 1995 | بھوپال, انڈیا

فضل تابش

غزل 13

نظم 6

اشعار 11

نہ کر شمار کہ ہر شے گنی نہیں جاتی

یہ زندگی ہے حسابوں سے جی نہیں جاتی

کمرے میں آ کے بیٹھ گئی دھوپ میز پر

بچوں نے کھلکھلا کے مجھے بھی جگا دیا

رات کو خواب بہت دیکھے ہیں

آج غم کل سے ذرا ہلکا ہے

سنتے ہیں کہ ان راہوں میں مجنوں اور فرہاد لٹے

لیکن اب آدھے رستے سے لوٹ کے واپس جائے کون

وہی دو چار چہرے اجنبی سے

انہیں کو پھر سے دہرانا پڑے گا

کتاب 8

 

آڈیو 9

اس کمرے میں خواب رکھے تھے کون یہاں پر آیا تھا

اسے معلوم ہے میں سرپھرا ہوں

جن خوابوں سے نیند اڑ جائے ایسے خواب سجائے کون

Recitation

"بھوپال" کے مزید شعرا

Recitation

Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

GET YOUR PASS
بولیے