حمیرا راحتؔ

غزل 15

نظم 11

اشعار 19

بہت تاخیر سے پایا ہے خود کو

میں اپنے صبر کا پھل ہو گئی ہوں

ذکر سنتی ہوں اجالے کا بہت

اس سے کہنا کہ مرے گھر آئے

سنا ہے خواب مکمل کبھی نہیں ہوتے

سنا ہے عشق خطا ہے سو کر کے دیکھتے ہیں

حضور آپ کوئی فیصلہ کریں تو سہی

ہیں سر جھکے ہوئے دربار بھی لگا ہوا ہے

گزر جائے گی ساری رات اس میں

مرا قصہ کہانی سے بڑا ہے

کتاب 1

 

تصویری شاعری 3

 

"کراچی" کے مزید شعرا

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

GET YOUR FREE PASS
بولیے