aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

دنیا سوچے شوق سے سوچے آج اور کل کے بارے میں

پریم واربرٹنی

دنیا سوچے شوق سے سوچے آج اور کل کے بارے میں

پریم واربرٹنی

MORE BYپریم واربرٹنی

    دنیا سوچے شوق سے سوچے آج اور کل کے بارے میں

    میں کیوں اپنا چین گنواؤں اس پاگل کے بارے میں

    سنگ مرمر کی قبروں میں محو خواب تھے ہم دونوں

    کل شب دیکھا خواب عجب سا تاج محل کے بارے میں

    آخر اس کی سوکھی لکڑی ایک چتا کے کام آئی

    ہرے بھرے قصے سنتے تھے جس پیپل کے بارے میں

    میرے شیتل من کی جوالا کو تو اور بھی بھڑکایا

    لوگ نہ جانے کیا کہتے ہیں گنگا جل کے بارے میں

    آنسو بن کر ٹوٹ گیا تھا جو سپنوں کی پلکوں سے

    سات یگوں سے سوچ رہا ہوں میں اس پل کے بارے میں

    چومو گھونگھٹ کھول کے چومو اس دلہن کے ہونٹوں کو

    یہ اپنا دستور ہے مے کی ہر بوتل کے بارے میں

    وہ جو کٹیا ڈال رہا ہے ویرانے میں شہر سے دور

    سارا شہر پریشاں کیوں ہے اس پاگل کے بارے میں

    پریمؔ بھری محفل میں کوئی داد نہیں فریاد نہیں!

    چپ سی ہے وہ جان غزل بھی میری غزل کے بارے میں

    مأخذ:

    Khushbu Ka Khwab (Pg. 104)

    • مصنف: Prem Warbartani
      • اشاعت: 1976
      • ناشر: Miss V. D. Kakkad
      • سن اشاعت: 1976

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے