Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

وہ میرے نالے کا شور ہی تھا شب سیہ کی نہایتوں میں

عتیق اللہ

وہ میرے نالے کا شور ہی تھا شب سیہ کی نہایتوں میں

عتیق اللہ

MORE BYعتیق اللہ

    وہ میرے نالے کا شور ہی تھا شب سیہ کی نہایتوں میں

    میں ایک ذرہ عنایتوں پر میں ایک گردش کثافتوں میں

    گرفت اور اس کی کر رہا ہوں جو آب ہے ان بصارتوں کی

    کمند اور اس پہ پھینکتا ہوں جو تہ نشیں ہے سماعتوں میں

    مرے لیے شہر کج میں رکھا ہی کیا ہے جو اپنے غم گنواؤں

    وہ ایک داماں بہت ہے مجھ کو سکوت افزا فراغتوں میں

    میں ایک شب کتنی راتیں جاگا وہ ماہ بیتے کہ سال گزرے

    پہاڑ سا وقت کاٹتا ہوں شمار کرتا ہوں ساعتوں میں

    ترے فلک ہی سے ٹوٹنے والی روشنی کے ہیں عکس سارے

    کہیں کہیں جو چمک رہے ہیں حروف میری عبارتوں میں

    وہ بوجھ سر پر اٹھا رکھا ہے کہ جسم و جاں تک ہیں چور جن سے

    پچاس برسوں کی ذلتیں جو ہمیں ملی تھیں وراثتوں میں

    یہ متن درج ذیل زمرے میں بھی شامل ہے

    ગુજરાતી ભાષા-સાહિત્યનો મંચ : રેખ્તા ગુજરાતી

    ગુજરાતી ભાષા-સાહિત્યનો મંચ : રેખ્તા ગુજરાતી

    મધ્યકાલથી લઈ સાંપ્રત સમય સુધીની ચૂંટેલી કવિતાનો ખજાનો હવે છે માત્ર એક ક્લિક પર. સાથે સાથે સાહિત્યિક વીડિયો અને શબ્દકોશની સગવડ પણ છે. સંતસાહિત્ય, ડાયસ્પોરા સાહિત્ય, પ્રતિબદ્ધ સાહિત્ય અને ગુજરાતના અનેક ઐતિહાસિક પુસ્તકાલયોના દુર્લભ પુસ્તકો પણ તમે રેખ્તા ગુજરાતી પર વાંચી શકશો

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے