noImage

عادل زیدی

عادل زیدی

نظم 3

 

اشعار 11

مات کھائی ہے اکثر شاہ نے پیادے سے

فرق کچھ نہیں پڑتا تاج اور لبادے سے

  • شیئر کیجیے

حال پوچھتے کیا ہو قصہ مختصر یہ ہے

گھر نہ بن سکا اب تک جو مکاں بنایا تھا

  • شیئر کیجیے

اپنے رسم و رواج کھو بیٹھے

باقی اب خاندان میں کیا ہے

  • شیئر کیجیے

یہ صحن ارض حرم ہے بہ احتیاط قدم

بہت قریب خدا ہے ذرا سنبھل کے چلو

  • شیئر کیجیے

گھٹائیں کھل کے برسیں تھیں چڑھے تھے دل کے دریا بھی

چڑھے دریاؤں کا اک دن اترنا بھی ضروری تھا

  • شیئر کیجیے

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

GET YOUR FREE PASS
بولیے