شکریہ پر شعر

شکریہ اے قبر تک پہنچانے والو شکریہ

اب اکیلے ہی چلے جائیں گے اس منزل سے ہم

قمر جلالوی

اس مہرباں نظر کی عنایت کا شکریہ

تحفہ دیا ہے عید پہ ہم کو جدائی کا

نامعلوم

خطوں کو کھولتی دیمک کا شکریہ ورنہ

تڑپ رہی تھی لفافوں میں بے زبانی پڑی

اظہر فراغ

شکریہ تیرا ترے آنے سے رونق تو بڑھی

ورنہ یہ محفل جذبات ادھوری رہتی

نامعلوم

شکریہ ریشمی دلاسے کا

تیر تو آپ نے بھی مارا تھا

مظفر حنفی

شکریہ واعظ جو مجھ کو ترک مے کی دی صلاح

غور میں اس پر کروں گا ہوش میں آنے کے بعد

جلیل مانک پوری

شکریہ اے گردش جام شراب

میں بھری محفل میں تنہا ہو گیا

سلام ؔمچھلی شہری

کہاں کے ماہر و کامل ہو تم ہنر میں عدیلؔ

تمہارے کام تو پروردگار کرتا ہے

عدیل زیدی

اے بے خودی سلام تجھے تیرا شکریہ

دنیا بھی مست مست ہے عقبیٰ بھی مست مست

جاوید صبا

شکریا تم نے بجھایا مری ہستی کا چراغ

تم سزاوار نہیں تم نے تو اچھائی کی

عفیف سراج